حکومت کے طالبان سے مذاکرات کے اشارے تشویشناک ہیں

سنی اتحاد کونسل پاکستان کے چیئرمین نے کہا ہے
سنی اتحاد کونسل پاکستان کے چیئرمین نے کہا ہے کہ حکومتی حلقوں میں پاکستانی طالبان سے مذاکرات کے اشارے تشویشناک ہیں۔
تاریخ شائع کریں : دوشنبه ۱۶ مهر ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۷:۴۴
موضوع نمبر: 366289
 
سنی اتحاد کونسل پاکستان کے چیئرمین نے کہا ہے کہ حکومتی حلقوں میں پاکستانی طالبان سے مذاکرات کے اشارے تشویشناک ہیں۔

سنی اتحاد کونسل کے اعلیٰ سطحی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے صاحبزادہ حامد رضا نے کہا کہ حکومت ایران اور سعودی عرب کے ساتھ تعلقات میں توازن قائم کرے۔

صاحبزادہ حامد رضا نے کہا کہ وزیرخارجہ کو اقوام متحدہ میں اپنے خطاب میں یمن کا مسئلہ بھی اٹھانا چاہیئے تھا، یمن میں سعودی مظالم کی انتہا ہوچکی ہے، ملک انتقامی سیاست کا متحمل نہیں ہوسکتا، حکومت سیاست بازی چھوڑ کرعوام کے مسائل پر توجہ دے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی طالبان سے مذاکرات کے فیصلے کی ڈٹ کر مخالفت کریں گے، 70 ہزار پاکستانیوں کے قاتل کسی رحم اور رعایت کے مستحق نہیں، حکومت خارجہ پالیسی پر پارلیمنٹ کو اعتماد میں لے۔

سنی اتحاد کونسل کے چیئرمین نے کہا کہ حکومتی حلقوں میں پاکستانی طالبان سے مذاکرات کے اشارے تشویشناک ہیں۔ انہوں نے کہا کہ قوم دہشتگردوں کے ساتھ مذاکرات برداشت نہیں کرے گی، حکومت نیشنل ایکشن پلان پر اس کی روح کے مطابق عمل کرے، کالعدم جماعتوں کا پھر سے متحرک ہونا خطرناک ہے۔
Share/Save/Bookmark