شام میں امریکی فوج کی موجودگی اقوام متحدہ کے چارٹرکی خلاف ورزی ہے

ولادیمیر پوتن نے کہا ہے کہ شام میں موجود تمام غیرملکی فورسز کو نکل جانا چاہیے
روسی صدر ولادیمیر پوتن نے کہا ہے کہ شام میں موجود تمام غیرملکی فورسز کو نکل جانا چاہیے جبکہ شام میں امریکی فوج کی موجودگی اقوام متحدہ کے چارٹرکی خلاف ورزی ہے۔
تاریخ شائع کریں : شنبه ۱۴ مهر ۱۳۹۷ گھنٹہ ۲۰:۰۵
موضوع نمبر: 365570
 
روسی صدر ولادیمیر پوتن نے کہا ہے کہ شام میں موجود تمام غیرملکی فورسز کو نکل جانا چاہیے جبکہ شام میں امریکی فوج کی موجودگی اقوام متحدہ کے چارٹرکی خلاف ورزی ہے۔

مہر خبررساں ایجنسی نے روسی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہےکہ روسی صدر ولادیمیر پوتن نے کہا ہے کہ شام میں موجود تمام غیرملکی فورسز کو نکل جانا چاہیے جبکہ شام میں امریکی فوج کی موجودگی اقوام متحدہ کے چارٹرکی خلاف ورزی ہے۔ ایک خصوصی گفتگومیں ان سے پوچھا گیاکہ آیا روس بھی شام سے اپنی فوج نکالے گا تو پوتین کا کہنا تھا کہ روس نے شام میں وہاں کی حکومت کی درخواست پر اپنی فوج تعینات کی ہے۔ اگر اسد رجیم کی طرف سے ہمیں بھی نکلنے کوکہا گیا تو ہم روس اپنی فوج بھی شام سے نکال لے گا۔ صدر پوتین نے کہاکہ شام کے شمالی شہر ادلب میں غیر فوجی علاقہ فعال ہے اور علاقے میں کسی بڑے فوجی آپریشن کے لیے فوج کو حرکت میں لانے کا کوئی پروگرام نہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ادلب میں روس اور ترکی کے باہمی تعاون سے غیر فوجی زون کے قیام کے مقاصد جلد حاصل ہو جائیں گے۔
Share/Save/Bookmark