سان سوچی سے کینیڈا کی اعزازی شہریت واپس لے لی گئی

روہنگیا مظالم کی وجہ سے میانمار کی لیڈر آنگ سان سوچی کو لگا بڑا جھٹکا لگا
کینیڈا نے یہ قدم سوچی کے ان کی فوج کی طرف سے روہنگیا ؤں پر ظالمانہ اور انسانیت سوز کارروائی سے انکار کئے جانے کے بعد اٹھایا ہے۔ سو کی یہ اعزاز گنوانے والی پہلی شخصیت بن گئی ہے۔
تاریخ شائع کریں : پنجشنبه ۱۲ مهر ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۰:۳۶
موضوع نمبر: 364892
 
روہنگیا مظالم کی وجہ سے میانمار کی لیڈر آنگ سان سوچی کو لگا بڑا جھٹکا لگا اور ان سے کینیڈا کی اعزازی شہریت واپس لے لی گئی ہے۔

’فائنانشیل ٹائمز‘ کی رپورٹ کے مطابق کینیڈا نے میانمار کی لیڈر آنگ سان سو چی سے کینیڈا کی اعزازی شہریت واپس لے لیا ہے۔ کینیڈا نے یہ قدم سوچی کے ان کی فوج کی طرف سے روہنگیا ؤں پر ظالمانہ اور انسانیت سوز کارروائی سے انکار کئے جانے کے بعد اٹھایا ہے۔  سو کی یہ اعزاز گنوانے والی پہلی شخصیت بن گئی ہے۔

کینیڈا کی سینیٹ نے سو چی کو دئیے گئے علامتی احترام کے لئے شہریت منسوخ کرنے کے لئے متفقہ طور پر ووٹ دیا۔ گزشتہ ہفتہ ہاؤس آف کامنس میں بھی اس سلسلے میں متفقہ طور پر ووٹ دے کر یہ فیصلہ منظور کیا تھا۔

کینیڈا کے دونوں ایوانوں نے ستمبر میں منظور قرارداد میں روہنگیاؤں کے خلاف تشدد کو ’قتل عام‘ قرار دیا تھا۔ میانمار میں فوج کی بہیمانہ کارروائیاں گزشتہ سال شروع ہوئی تھیں اور سات لاکھ روہنگیاؤں کو بنگلہ دیش میں پناہ لینا پڑا تھا۔ کینیڈا نے آنگ سان سو چی کو سال 2007 میں یہ اعزازی شہریت دی تھی۔
Share/Save/Bookmark