عاشوا میں مذاہب کو قریب لانے کی عظیم صلاحیت موجود ہے

حجت اسلام " علی سعیدی " نے تقریب کے حبرنگار سے گفتگو کے دوران کہا
عاشورہ محرم ہے جس میں ایک عظیم صلاحیت موجود ہے کہ مذاہب کے درمیان وحدت ایجاد کرسکے اور مسلمانوں کے درمیان محبت و آشتی کو فروغ دیا جاسکے۔
تاریخ شائع کریں : يکشنبه ۲۵ شهريور ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۶:۰۲
موضوع نمبر: 359584
 
عاشوا میں مذاہب کو قریب لانے کی عظیم صلاحیت موجود ہے

حجت اسلام " علی سعیدی " نے تقریب کے حبرنگار سے گفتگو کے دوران کہا،بعض مواقع  اسے ہیں جن کو استعمال کرکے بین المذاہب ہم آہنگی ایجاد کی جاسکتی ہے۔

ان مواقع میں سے ایک عاشورہ محرم ہے جس میں ایک عظیم صلاحیت موجود ہے کہ مذاہب کے درمیان وحدت ایجاد کرسکے اور مسلمانوں کے درمیان محبت و آشتی کو فروغ دیا جاسکے۔

انہوں نے کہا ہر سال امام حسین (ع) کے چاہنے والوں میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے اور ان کے چاہنے والے امام حسین (ع) سے اپنی محبت کا اظہار کرنے ان کی مرقد مطہر کی زیارت پر بھی جاتے ہیں، یہ ایک عظیم فرست ہے جس فائدہ اٹھایا جاسکتا ہے اور مسلمانوں کے درمیان محبت اور اخوت ایجاد کی جا سکتی ہے اور اسلام دشمنوں کی سازشوں کا خاتمہ کیا جاسکتا ہے۔

آج ہم اس عظیم تحریک کو امریکہ، یورپ، چین اور افریقی ممالک میں بھی ملاحظہ کرتے ہیں اور اس وجہ امام حسین (ع) کا حماسی پیغام ہے جس نے دنیا کو ظالم اور استبدادی قوتوں کے سامنے کھڑا کر دیا اور آج کے مظلوم امام حسین (ع) سے درس حماسی لے کر ان کے مقابے میں میدان میں آگئے ہں۔

سپاہ پاسداران میں رہبر کے سابق نمایندہ نے کہا عاشورہ کی اس صلاحیت سے ہمیں بھر پور فائدہ اٹھانا چاہیے اور اس کے زریعہ مسلمانوں میں وحدت کے فروغ کے لیے کام کرنا چاہیے ، کیوں کہ عاشورا درس آزادی اور آزادگی ہے۔

 آج کے زمانے مین انسانوں کو جس چیز کی سب سے زیادہ ضرورت ہے وہ درس آزادی ہے اور یہ صرف کربلا میں ہی موجود ہے امام حسین (ع) نے شہادت ظلم کے سامنے سر جھکانے پر شہادت کو ترجیح دی اور آزاد زندگی کو ترک نہیں کیا۔

تمام انبیاء (ع) کی تبلیغ کا محور اور مقصد ایک اسلامی اور الہی نظام کی بنیاد تھی اور ہر نبی اپنے وقت میں اس کی لیے کوشش کرتا چلا گیا اور یہاں تک کے نبی مکرم (ص) کی باری آئی اور آپ نے اپنی زمہ داریوں کو بطریق احسن انجام دیا اور اس کے تسلسل کے لیے مولا امیر المومنیین (ع) اور ان کے بعد امام حسن اور امام حسین علیھماالسلام کو امامت اور ان کے بعد ان کے فرزندوں کو اس نظام کی زمہ داری  سونپی۔

امام حسین (ع) کے عاشورا نے اس نظام کو تحفظ دیا اور آنے والے زمانوں کے لیے ایک مثال قائم کی تا کہ لوگ گمراہ نہ ہوجائیں۔

امام صادق(ع) کے بہت سے شاگرد اہلسنت میں سے تھے اور جن میں ابو حنیفہ اور امام مالک شامل ہیں امام (ع) نے اپنے زمانے میں بغیر کسی مسلک اور مذہب کے فرق کے مسلمانوں میں علم تقسیم کیا، آج بھی ہمیں ایسی روش کا سہارا لے کر اپنے مقصد کی جانب بڑھنا چاہیے۔
Share/Save/Bookmark