عراقی وزیر خارجہ نے امریکی تشویش کو سختی سے مسترد کر دیا

عراق اپنی سرزمین پر موجود تمام غیر ملکیوں کی حفاظت کر رہا ہے اور وہ بیرونی طاقتوں کو اس معاملے میں مداخلت کی اجازت نہیں دے گا۔
تاریخ شائع کریں : جمعه ۲۳ شهريور ۱۳۹۷ گھنٹہ ۲۱:۳۰
موضوع نمبر: 359129
 
عراق کے وزیر خارجہ ابراہیم الجعفری نے سفارتی مراکز کی حفاظت سے متعلق امریکی تشویش کو سختی کے ساتھ مسترد کر دیا۔

قاہرہ میں عرب لیگ کے اجلاس کے موقع پر صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے عراقی وزیر خارجہ نے کہا کہ عراق اپنی سرزمین پر موجود تمام غیر ملکیوں کی حفاظت کر رہا ہے اور وہ بیرونی طاقتوں کو اس معاملے میں مداخلت کی اجازت نہیں دے گا۔
انہوں نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ عراق کے پاس ایسی کارآمد سیکورٹی فورس موجود ہے جس نے داعش جیسے دہشت گردہ گروہ کو شکست دی ہے حالانکہ اس وقت بہت سے ممالک اسے شکست دینے پر قادر نہ تھے۔
ابراہیم الجعفری نے کہا کہ عراق کسی بھی ملک کو اپنے اندرونی معاملات میں مداخلت کرنے کی اجازت نہیں دیگا اور دیگر ملکوں کے اندرونی معاملات میں مداخلت نہ کرنے کے اصول پر سختی کے ساتھ عمل کرتا رہے گا۔
قابل ذکر ہے کہ امریکی حکام نے بصرہ کے حالیہ فسادات میں امریکی قونصل خانے کے کردار کا راز فاش ہونے کے بعد رائے عامہ کو منحرف کرنے کی غرض سے عراق میں اپنے سفارتی مراکز کی سیکورٹی سے متعلق شور مچانا شروع کر دیا ہے۔
امریکہ نے عراق میں اپنی آلہ کار حکومت کے قیام میں ناکامی کے بعد اس ملک میں کشیدگی پھیلانے اور داعش کو شکست دینے والے عوامی مزاحمتی فورس حشد الشعبی کے خلاف دباؤ میں اضافہ کر دیا ہے۔
Share/Save/Bookmark