افغان فوج اور طالبان کے درمیان جھڑپ میں 60 ہلاک

افغانستان کے صوبے جوزجان کا ضلع خام آب طالبان کے قبضے میں چلا گیا
افغانستان کے صوبے ہلمند میں رات گئےطالبان نے چار حملوں کے دوران 60 افغان اہلکاروں کو ہلاک اور متعدد کو زخمی کردیا۔
تاریخ شائع کریں : سه شنبه ۲۰ شهريور ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۵:۵۱
موضوع نمبر: 357941
 
افغانستان کے صوبے جوزجان کا ضلع خام آب طالبان کے قبضے میں چلا گیا، جس کی افغان حکام نے بھی تصدیق کی ہے۔

افغان میڈیا کے مطابق افغان سیکیورٹی فورسز سے شدید جھڑپوں کے بعد ضلع خام آب کا کنٹرول طالبان کے قبضے میں گیا ہے۔

افغان میڈیاکا مزید کہنا ہے کہ افغانستان کے صوبے ہلمند میں رات گئےطالبان نے چار حملوں کے دوران 60 افغان اہلکاروں کو ہلاک اور متعدد کو زخمی کردیا۔

ذرائع ابلاغ کے مطابق طالبان نے رات گئے 4 صوبوں میں سیکیورٹی فورسز پر شدید حملے کیے۔ طالبان نے صوبے سرپل میں حملہ کرکے فوجی اڈے پر قبضہ کرلیا جبکہ صوبائی دارالحکومت پر بھی قبضے کا خدشہ ہے۔ سرپل شہر میں طالبان کے حملے میں17 اہلکار جاں بحق اور متعدد زخمی ہوگئے۔

طالبان نے سرپل میں ایک چیک پوسٹ پر بھی قبضہ کرلیا۔ جھڑپ میں39 طالبان جاں بحق اور 14 زخمی ہوگئے۔ طالبان نے صوبہ قندوز کے ضلع دشت آرچی میں بھی حملہ کیا جس میں 19 اہلکار جاں بحق اور 20 زخمی ہوگئے۔

صوبہ سمنگان میں بھی طالبان نے 2 چیک پوسٹوں پر حملے کیے جس میں 14 اہلکار جاں بحق ہوگئے۔ اسی طرح صوبے جاؤزجان میں سیکڑوں طالبان نے ضلع خوماب پر حملہ کیا جس میں 8 اہلکار مارے گئے۔

افغان میڈیا کا مزید کہنا ہے کہ افغانستان کے صوبے ہلمند میں رات گئے مارٹر بم حملے کے نتیجے میں ایک ہی خاندان کے6 افراد جاں بحق اور6 زخمی ہوگئے۔

طالبان ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے قندوز اور جاؤزجان میں حملوں کی ذمے داری قبول کرلی ہے۔
Share/Save/Bookmark