ماہ محرم میں عزاداروں کے لیے سکیورٹی کے سخت انتظامات

حکومت پاکستان نے حسینی عزاداروں کو سیکورٹی فراہم کرنے کے لئے سخت اقدامات عمل میں لانے کا اعلان کیا ہیں۔
پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے اعلان کیا ہے کہ پاکستان کے مختلف صوبوں خاص طور سے پنجاب اور سندھ میں کہ جہاں ماضی میں زیادہ دہشت گردانہ حملے ہوتے رہے ہیں، سخت سیکورٹی اقدامات کئے جا رہے ہیں۔
تاریخ شائع کریں : يکشنبه ۱۸ شهريور ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۵:۳۵
موضوع نمبر: 357238
 
ماہ محرم الحرام کی آمد کی مناسبت سے حکومت پاکستان نے حسینی عزاداروں کو سیکورٹی فراہم کرنے کے لئے سخت اقدامات عمل میں لانے کا اعلان کیا ہیں۔

رپورٹ کے مطابق پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے اعلان کیا ہے کہ پاکستان کے مختلف صوبوں خاص طور سے پنجاب اور سندھ میں کہ جہاں ماضی میں زیادہ دہشت گردانہ حملے ہوتے رہے ہیں، سخت سیکورٹی اقدامات کئے جا رہے ہیں۔

پاکستان کے مختلف مذاہب کے علمائے کرام نے بھی تاکید کی ہے کہ حضرت امام حسین علیہ السلام پیغمبر اسلام حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کے نواسے ہیں اور تمام مسلمانوں پر نواسہ رسولۖ کا احترام واجب ہے اور ایسے کسی بھی اقدام سے بچنے اور اس کی مخالفت کئے جانے کی ضرورت ہے کہ جس سے محرم الحرام کی عزاداری میں امن و امان کی صورت حال کو نقصان پہنچ سکتا ہے۔

سخت سیکورٹی اقدامات کے تحت پاکستان کے کراچی اور لاہور جیسے بڑے شہروں میں تاسوعا اور عاشورہ کے موقع پر موبائل سروس بند رکھے جانے کا فیصلہ کیا گیا ہے اور عشرہ محرم کے دوران مختلف صوبوں میں موٹر سائیکل پر ڈبل سواری پر پابنددی لگا دی گئی ہے۔

واضح رہے کہ پاکستان میں محرم کے دوران خاص عقیدت و احترام اور جوش و جذبے ساتھ حسینی عزاداری کا اہتما کیا جاتا ہے۔
Share/Save/Bookmark