2025تک پاکستان دنیا کی پانچویں بڑی ایٹمی طاقت بن جائے گا

فیڈریشن آف امریکن سائنٹسٹس کے ممبران نے اپنی رپورٹ میں دعوی کیا ہے
2025تک پاکستان کے وار ہیڈز میں 220سے 250 تک اضافہ ہوسکتا ہےاور اگر یہ رجحان برقرار رہا تو پاکستان دنیا کی پانچویں بڑی ایٹمی طاقت بن جائے گا۔
تاریخ شائع کریں : پنجشنبه ۱۵ شهريور ۱۳۹۷ گھنٹہ ۱۷:۰۸
موضوع نمبر: 356470
 
فیڈریشن آف امریکن سائنٹسٹس کے ممبران نے اپنی رپورٹ میں دعوی کیا ہے کہ پاکستان کے پاس 2025 تک 250 وار ہیڈ ہوجائیں گے۔

بین الاقوامی خبررساں ایجنسی نے جنگ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ فیڈریشن آف امریکن سائنٹسٹس کے ممبران نے اپنی رپورٹ میں دعوی کیا ہے کہ پاکستان کے پاس 2025 تک 250 وار ہیڈ ہوجائیں گے۔ بلیٹن آف اٹامک سائنٹسٹس میں 31اگست کو شائع ایک رپورٹ میں دعوی کیا گیا ہے کہ اگر پاکستان نے اپنے ایٹمی پروگرام میں اور ڈلیوری کی صلاحیتوں میں اضافہ جاری رکھا تو اس کے نیوکلیئر ہتھیاروں کے ذخائر میں اگلے سات سالوں میں 150-140سے 220اور250تک کا اضافہ ہوسکتا ہے۔ فیڈریشن آف امریکن سائنٹسٹس کے ممبران کی جانب سے لکھی گئی 12صفحوں پر مشتمل رپورٹ میں دعوی کیا گیا ہے کہ پاکستان یورینیم کی افزودگی اور پلوٹو نیم کی پیداواری صلاحیتوں میں توسیع اور ڈلیوری کا نظام وضع کرنے میں مصروف ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پاکستان اپنے نیوکلر ذخائر میں مزید وارہیڈز ، مزید ڈلیوری سسٹم اور ایٹمی مواد کی پیداوار میں اضافہ جاری رکھے ہوئے ہے اور ہمارا اندازہ ہے کہ 2025تک  پاکستان  کے وار ہیڈز میں 220سے 250 تک اضافہ ہوسکتا ہےاور اگر یہ رجحان برقرار رہا تو پاکستان دنیا کی پانچویں بڑی ایٹمی طاقت بن جائے گا۔
Share/Save/Bookmark