ایران کے پہلے تجارتی مرکز کا مشرقی ایشیا میں افتتاح

تجارتی مرکز کے ذریعے ایران میں غیرملکی سرمایہ کاری میں مزید اضافہ کیا جاسکتا ہے
ایران نے پہلی بار مشرقی ایشیائی خطے میں اپنا تجارتی مرکز کا افتتاح کردیا ہے:علی دہقانی
تاریخ شائع کریں : پنجشنبه ۲۴ اسفند ۱۳۹۶ گھنٹہ ۰۰:۴۶
موضوع نمبر: 318339
 
چین کے شنگھائی فری زون علاقے میں پہلی بار اسلامی جمہوریہ ایران کے تجارتی مرکز کھول دیا گیا جس کا مقصد ایرانی مصنوعات کی برآمدات میں اضافہ اور غیرملکی سرمایہ کاری کو راغب کرنا ہے.

شنگھائی میں تعینات ایران کے کمرشل اتاشی علی دہقانی کے مطابق، ایران نے پہلی بار مشرقی ایشیائی خطے میں اپنا تجارتی مرکز کا افتتاح کردیا ہے جس کا اصل مقصد ایرانی ساختہ اشیا کے فروغ اور اس کی برآمدات میں اضافہ کرنا ہے.

انہوں نے مزید کہا کہ اس مرکز کے ذریعے ایران میں غیرملکی سرمایہ کاری میں مزید اضافہ کیا جاسکتا ہے.

ایرانی عہدیدار نے بتایا کہ تجارتی مرکز کی سرگرمیاں کمرشل اتاشی کے دفتر کی زیرنگرانی ہوں گی اور اس یہاں سے اشیا کی خرید و فروخت فریقین کی موجودگی یا آنلائن کی شکل میں ممکن ہوگی.

انہوں نے مزید کہا کہ ایران کے تجارتی مرکز 8 حصوں میں شامل ہے جس میں مختلف ایرانی اشیاء بشمول دستکاری کی مصنوعات، قالین، پیٹرو کیمیل، تعمیراتی اشیا، خوراک، ڈرائی فروٹس اور سیاحتی شعبے سے متعلق خدمات کو اُجاگر کیا جائے گا.

علی دہقانی نے بتایا کہ ایران کے تجارتی مرکز کا افتتاح گزشتہ دنوں ایران چین بزنس فورم کے مشترکہ سمینار کے موقع پر کیا گیا جس میں 500 سے زائد چینی تاجر شریک تھے.

یہ بات قابل ذکر ہے کہ رواں ایرانی سال کے 11 مہینوں کے دوران چین، ایران کو 11.5 ارب ڈالر کی برآمدات اور ایران سے 8.5 ارب ڈالر کی درآمدات کرکے اس کا پہلا تجارتی پارٹنر بن گیا ہے.
Share/Save/Bookmark