سعودی عرب میں پہلی بار خواتین کی میراتھن دوڑ کا مقابلہ

ریس کے شرکاء نے تین کلومیٹر کا فاصلہ طے کیا
مزنہ النصار نے اپنی جیت سے متعلق بتایا کہ اہل خانہ کی طرف سے میراتھن میں حصہ لینے پر کسی قسم کی پابندی عائد نہیں کی گئی
تاریخ شائع کریں : دوشنبه ۱۴ اسفند ۱۳۹۶ گھنٹہ ۱۵:۰۲
موضوع نمبر: 316252
 
سعودی عرب میں پہلی بار خواتین کی میراتھن دوڑ کے مقابلے کا اہتمام کیا گیا جس میں مزنہ النصار نے پہلی پوزیشن حاصل کی۔

مزنہ النصار نے اپنی جیت سے متعلق بتایا کہ اہل خانہ کی طرف سے میراتھن میں حصہ لینے پر کسی قسم کی پابندی عائد نہیں کی گئی اور نہ ہی کوئی رکاوٹ کھڑی کی گئی۔ میراتھن میں حصہ لینے والی تمام خواتین شرعی پردے کی مکمل طور پر پابند تھیں۔

مزنہ کا مزید کہنا تھا کہ وہ 2020 میں اولمپک کھیلوں کے دوران میراتھن میں سعودی عرب کی نمائندگی کرنے کا ارادہ رکھتی ہیں۔

واضح رہے کہ ہفتے کو سعودی عرب میں میراتھن کا اہتمام کیا گیا جس میں امریکا، تھائی لینڈ اور دیگر ملکوں کی خواتین سمیت 1500خواتین نے حصہ لیا۔
Share/Save/Bookmark