یمن میں بچوں، عورتوں اور مردوں کا قتل عام

یمن پرسعودی جارحیت، اقوام متحدہ کی خاموشی
یمن پر سعودی کا سلسلہ جاری ہے لیکن اقوام متحدہ اور سکیورٹی کونسل نے یمن میں جنگ بندی کے سلسلے میں کوئی قدم نہیں اٹھایا
تاریخ شائع کریں : يکشنبه ۱۳ اسفند ۱۳۹۶ گھنٹہ ۱۶:۴۶
موضوع نمبر: 315998
 
یمن میں بچوں، عورتوں اور مردوں کا قتل عام اور شہری علاقوں پر سعودی عرب کی بہیمانہ اور مجرمانہ بمباری کا سلسلہ جاری ہے لیکن اقوام متحدہ اور سکیورٹی کونسل نے یمن میں جنگ بندی کے سلسلے میں کوئی قدم نہیں اٹھایا جبکہ شام میں تکفیری اور داعشی دہشت گردوں کو بچانے کے لئے اقوام متحدہ، سکیورٹی کونسل اور عالمی میڈیا پرہر ممکن کوششیں ہو رہی ہیں۔

شام میں جن تکفیری دہشت گردوں کو بچانے کی کوشش کی جارہی ہے انھیں امریکہ اور سعودی عرب کی حمایت اور پشت پناہی حاصل ہے۔

واضح رہے کہ سعودی حکومت اور اس کے اتحادیوں نے یمن کو مارچ دو ہزار پندرہ سے اپنی وحشیانہ جارحیت کا نشانہ بنارکھا ہے جس میں اب تک دسیوں ہزار بے گناہ عام شہری شہید ہوچکے ہیں ۔

سعودی حکومت اور اس کے اتحادیوں نے اسی کے ساتھ یمن کا زمینی، سمندری اور فضائی محاصرہ بھی کررکھا ہے جس کے نتیجے میں یمن کے مظلوم عوام کو کافی مشکلات کا سامناہے۔
Share/Save/Bookmark