غاصب صیہونی حکومت دیگر مذاہب کی توہین کرتی ہے

غاصب صیہونی حکومت عیسائیوں کی شناخت کو سلب کرنے کی کوشش کر رہی ہے
بیت المقدس کے اسرائیلی بلدیہ نے بیت المقدس شہر میں کلیسا سے متعلق کئی عمارتوں کو نیلام کیا اور کلیسا کے بینک اکاونٹ کو منجمد کردیا
تاریخ شائع کریں : پنجشنبه ۱۰ اسفند ۱۳۹۶ گھنٹہ ۱۴:۵۴
موضوع نمبر: 315356
 
فلسطین کی تنظیم پی ایل او نے کہا ہے کہ غاصب صیہونی حکومت نے ہمیشہ مسلمانوں اور عیسائیوں کی توہین کی ہے۔

پی ایل او کی مرکزی کمیٹی کے سیکریٹری صائب عریقات نے گذشتہ روز رام‌ الله میں کہا کہ عیسائی بیت المقدس میں اسرائیلی حکام کی اجازت کے بغیرعبادت نہیں کر سکتے۔

انہوں نے کہا کہ غاصب صیہونی حکومت عیسائیوں کی شناخت کو سلب کرنے کی کوشش کر رہی ہے اور اسی لئے بیت المقدس شہرکو عیسائیوں سے پاک کرنے کی کارروائی شروع کی ہے۔

در ایں اثناء خود مختار فنسطینی انتظامیہ کے صدر محمود عباس نے بیت المقدس شہر میں قیامت کلیسا کی افتتاح کے بعد روس، اردن، ترکی اور دیگر ممالک کے سفیروں سے ملاقات میں جبال کے علاقے میں بیت‌ الحم سے وابستہ کلیسا کی اراضی کریمزان پر صیہونی حکومت کی جانب سے قبضہ کرنے اور 58 فلسطینی گھرانوں کی نقل مکانی اور ان کی زمینوں کو نیلام کرنے کے اقدامات کا جائزہ لیا۔

واضح رہے کہ بیت المقدس کے اسرائیلی بلدیہ نے بیت المقدس شہر میں کلیسا سے متعلق کئی عمارتوں کو نیلام کیا اور کلیسا کے بینک اکاونٹ کو منجمد کردیا۔
Share/Save/Bookmark