تقريب خبررسان ايجنسی 17 مهر 1398 گھنٹہ 17:31 http://www.taghribnews.com/ur/news/439613/یوکرین-کے-صدر-سے-ان-کی-ٹیلی-فونی-گفتگو-دوستانہ-تھی -------------------------------------------------- ٹائٹل : یوکرین کے صدر سے ان کی ٹیلی فونی گفتگو دوستانہ تھی امریکی صدر ٹرمپ نے دعوی کیا ہے کہ یوکرین کے صدر سے ان کی ٹیلی فونی گفتگو دوستانہ تھی اور یہ کسی پر کوئی دباؤ ڈالنے کے لئے نہیں تھی -------------------------------------------------- امریکی صدر ٹرمپ نے دعوی کیا ہے کہ یوکرین کے صدر سے ان کی ٹیلی فونی گفتگو دوستانہ تھی اور یہ کسی پر کوئی دباؤ ڈالنے کے لئے نہیں تھی متن : امریکی صدر ٹرمپ نے دعوی کیا ہے کہ یوکرین کے صدر سے ان کی ٹیلی فونی گفتگو دوستانہ تھی اور یہ کسی پر کوئی دباؤ ڈالنے کے لئے نہیں تھی امریکی صدر ٹرمپ نے ٹویٹر پیج پر لکھا کہ یوکرین کے صدر سے میری ٹیلی فونی گفتگو دوستانہ تھی اور اس مکالمے میں یوکرین کے صدر پر جوبایڈن کے بارے میں تحقیقات انجام دینے کے لئے کوئی دباؤ نہیں ڈالاگیا - ٹرمپ نے پہلے بھی ایک ٹویٹ میں لکھا تھا کہ میری ٹیلی فونی گفت گو کا راز فاش کرنے کا معاملہ پوری طرح غلط ہے ۔ ٹرمپ نے ایوان نمائندگان کی اسپیکر ننسی پلوسی اور ایوان نمائندگان کی انٹیلی جینس کمیٹی کے سربراہ ایڈم شیف پر غداری کا الزام لگاتے ہوئے کہا ہے کہ یہ دونوں یہ جانتے ہیں کہ یہ اسکینڈل غلط ہے - ایوان نمائندگان کی اسپیکر ننسی پلوسی کے حکم سے ٹرمپ کے مواخذے کی تحقیقات شروع ہوچکی ہیں اور اب تک ایوان نما ئندگان کے دو سوپچیس سے زائد ارکان اس کی حمایت کرچکے ہیں - اس درمیان امریکا کی نیوز ویب سائٹایکسیس نے خبردی ہے کہ یوکرین گیٹ کے تعلق سے ٹرمپ کے مواخذے کا مطالبہ عام لوگوں میں بڑھتا جارہا ہےایکسیس نیوز ویب سائٹ نے خبردی ہے کہ ٹرمپ کے مواخذے کے حق میں عوامی حمایت، امریکا کے سابق صدور نیکسن اور کلنٹن کے مواخذے کے حق میں جو مطالبات کئے گئے تھے اس سے کہیں زیادہ ہے - سروے رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ٹرمپ کے مواخذے اور عدم مواخذے میں لوگوں کا نظریہ ففٹی ففٹی ہے لیکن یوکرین گیٹ کے سامنے آنے کے بعد ٹرمپ کا مواخذہ کئے جانے کا مطالبہ بڑھتا جا رہا ہے - سی این این نے جو سروے کیا ہے کہ اس میں مئی کے مہینے کے بعد سے اب ریپبلیکن اور غیر جانبدار افراد بھی ٹرمپ کے مواخذے کی حمایت کرنے لگے ہیں - یوکرین کے صدر ٹرمپ کی ٹیلی فونی گفت گو راز فاش ہونے کے بعد وہ بھی ایک ایسے وقت جب امریکا کے صدارتی انتخابات میں صرف ایک سال کا عرصہ باقی بچا ہے ٹرمپ کا مواحذہ کرنے کا مطالبہ بڑھتا جارہا ہے ۔